شازشوں نے گھیر لیا بھارتی فلم انڈسٹری کو، سشانت کی خودکشی نے اہم شخصیات کے چہرے کردیئے بےنقاب

رواں برس جون میں خودکشی کرنے والے بولی وڈ اداکار سشانت سنگھ کی سابق گرل فرینڈ ریا چکرورتی نے پہلی بار اعتراف کیا ہے کہ وہ اداکار کے لیے منشیات کا بندوبست کرتی رہی ہیں۔

بھارتی میڈیا کے مطابق نارکوٹکس کنٹرول بیورو (این سی بی) نے 6 ستمبر کو ریا چکرورتی سے تقریبا 7 گھنٹے تک پوچھ گچھ کی، جہاں انہوں نے کئی حیران کن انکشافات کیے۔ رپورٹ کے مطابق ریا چکرورتی نے اعتراف کیا کہ وہ سشانت سنگھ راجپوت کے لیے اپنے بھائی شووک چکربورتی کے ذریعے منشیات خریدتی رہی ہیں۔

اداکارہ نے بتایا کہ سشانت سنگھ منشیات کے عادی تھے اور وہ بعض مرتبہ فلم کی شوٹنگ پر بھی منشیات منگواتے تھے اور کئی بار وہ شوٹنگ پر منشیات ساتھ لے جاتے تھے۔ریا چکرورتی نے یہ اعتراف بھی کیا کہ ان کے بھائی دوسرے منشیات فروشوں سے نشہ خریدتے تھے اور وہ بھی ان منشیات فروشوں سے مل چکی ہیں۔

تاہم اداکارہ نے ان الزامات کو مسترد کیا کہ وہ خود بھی منشیات استعمال کرتی رہی ہیں۔اداکارہ نے کہا کہ اگرچہ وہ سشانت سنگھ کے لیے منشیات کا بندوبست کرتی رہی ہیں تاہم انہوں نے خود کبھی منشیات استعمال نہیں کی، البتہ وہ سگریٹ نوشی کرتی ہیں۔ نارکوٹکس بیورو حکام نے ریا چکرورتی سے گرفتار کیے گئے تین افراد کے آمنے سامنے تفتیش کی۔

نارکوٹکس حکام نے ریا چکرورتی سے اپنے گرفتار بھائی شووک چکربورتی کے سامنے بھی سوالات کیے جب کہ حکام نے ان سے سشانت سنگھ کے منیجر اور باورچی کے سامنے بھی پوچھ گچھ کی۔سشانت سنگھ کے باورچی نے نارکوٹکس حکام کو بتایا تھا کہ اداکارہ خود بھی منشیات استعمال کرتی رہی ہیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ ریا چکرورتی نے نارکوٹکس حکام کے سامنے کئی اہم بولی وڈ شخصیات کے نام بھی بتائے۔

تاہم ابھی یہ واضح نہیں ہے کہ اداکارہ نے بولی وڈ کی اہم اور بااثر شخصیات کے نام کس سلسلے میں لیے۔ اداکارہ نے یہ بھی بتایا کہ سشانت سنگھ راجپوت کی رہائش گاہ پر نشے کی پارٹیاں منعقد ہوتی رہی ہیں، جن میں کئی اہم بولی وڈ شخصیات بھی شرکت کرتی رہی ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں