فیصل قریشی کراچی کی انتظامیہ پر برہم، کے الیکٹرک کو بھی تنقید کا نشانہ بنا ڈالا

ٹیلی ویژن کے معروف اداکار فیصل قریشی نے کہا ہے کہ بارش کو ہوئے 5دن گزر گئے لیکن شہر سے پانی کی نکاسی کا مکمل انتظام نہ ہوسکا، کلفٹن اور ڈیفنس کے رہائشی سراپا احتجاج بن گئے ۔

انہوں نے بتایا کہ ان کے علاقے میں5دن سے بجلی نہیں ہے اور بارش کا پانی اب بھی موجود ہے، نکاسی کا کام ہورہا ہے لیکن کچھ علاقوں میں اب بھی بہت براحال ہے۔

اداکار فیصل قریشی کا کہنا تھا کہ ہرسال بارشوں میں ایسا ہی ہوتا ہے اس کے باوجود اس مسئلہ کا مستقل حل کیوں نہیں نکالا جاتا؟4دن بعد کل سے ہمارے علاقے میں نکاسی آب کا کام شروع ہوا ہے۔ دنیا کے بیشتر ممالک میں اس سے زیادہ بارشیں ہوتی ہیں لیکن وہاں بجلی نہیں جاتی۔

بجلی کی عدم فراہمی پر انہوں نے کے الیکٹرک کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ان کا کہنا تھا کہ کیا یہ ادارہ ہمارا ایک ماہ کا بل معاف کرے گا؟ جنریٹرپر اب تک 50ہزار روپے کا ڈیزل لگ چکا ہے، کیا یہ اس کے پیسے دینگے؟

علاوہ ازیں بارش سے متاثرہ ڈیفنس اور کلفٹن کے رہائشیوں نے سی بی سی دفتر میں احتجاجی مظاہرہ کیا، مظاہرین نے بارش کے پانی کی عدم نکاسی پر ذمہ داروں کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا مطالبہ کردیا۔

مظاہرین کا کہنا تھا کہ ہم ماہانہ کروڑوں روپے ٹیکس دیتے ہیں مگر ہمارے گھر پانی میں ڈوبے ہوئے ہیں، پانچ دن سے نہ پانی ہے بجلی کوئی ایکشن لینے والا بھی نہیں۔

بعد ازاں ڈی آئی جی ساؤتھ مظاہرین سے مذاکرات کے لئےسی بی سی دفتر پہنچے مگر مظاہرین نے ڈی آئی جی ساؤتھ سے مذاکرات سے انکار کردیا، مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ پانچ سال تک ٹیکس معاف کیاجائے اور سی بی سی کے سی ای او استعفٰی دیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں