علی ظفر پر سوالوں کی بوچھاڑ، گلوکار نے چپ سادھ لی۔۔۔ سیشن کورٹ میں طلبی

سیشن کورٹ نے معروف اداکار و گلوکار علی ظفر کو میشا شفیع کیخلاف ہتک عزت دعوی میں جرح کیلئے آج دوبارہ طلب کرلیا ہے، علی ظفر نے میشا شفیع کی جانب سے ہتک عزت دعوی کی نقول وصول کرلیں۔

گزشتہ روز گلوکارہ میشا شفیع کیخلاف سو کروڑ ہرجانہ دعوی کیس میں اداکار علی ظفر ایڈیشنل سیشن جج امجد علی شاہ کی عدالت میں پیش ہوئے۔ عدالت نے کارروائی میں مداخلت پر علی ظفر کی وکیل عنبرین قریشی پراظہار برہمی کیا۔ میشا شفیع کے وکیل نے علی ظفر سے جرح کرتے ہوئے کہا کہ آپ کے بیان سے واضح نہیں کہ آپ نے میشا کو ہراساں نہیں کیا، میشا نے کسی اور کے خلاف جنسی ہراسگی کا الزام کیوں عائد نہیں کیا؟۔

علی ظفر نے کہا کہ اس کا مجھے علم نہیں، انہوں نے جرح میں سوالوں کے جواب میں کہا میشا نے کہا تھا کہ علی کے ساتھ بہت اچھا وقت گزرا، مجھ پر خواتین کے منظم گروہ نے الزام عائد کئے،سستی شہرت، پیسے اور پیشہ وارانہ حسد کیلئے ایسا کیا جاتا ہے۔ سیشن جج نے عدالتی وقت ختم ہونے پر علی ظفر کو آج دوبارہ جرح کیلئے طلب کیا ہے، دوسری جانب عدالت نے گلوکارہ میشا شفیع کی جانب سے علی ظفر پر دو سو کروڑ روپے ہرجانے کے دعوی کی سماعت بھی کی، عدالتی حکم  پرعلی ظفر کو ہرجانے کے دعوی کی نقول فراہم کردی گئیں۔

 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں