11

پاکستان کے معاشی میدان میں کامیابیوں کے اہم پہلو سامنے آتے ہی مودی سرکار کی نیندیں حرام ہوگئیں

عالمی اداروں کی جانب سے پاکستان کی ابھرتی معیشت کی خبریں تو آرہی ہیں جبکہ وزارت خزانہ کی جانب سے بھی معاشی کارگردگی رپورٹ جاری کر دی گئی۔

وزارت خزانہ کے مطابق رواں مالی سال کے پہلےپانچ ماہ میں ٹیکس وصولویوں میں سترہ فیصد اضافہ ہوا ہے۔ موڈیز کا پاکستانی معیشت کو منفی سے مستحکم کرنا کن معاشی اشاریوں کی وجہ سے ممکن ہوا وزارت نے سب بتا دیا۔ وزارت خزانہ کے مطابق رواں مالی سال کے پانچ ماہ میں ٹیکس وصولیوں میں 17 فیصد اضافہ ہوا جبکہ ٹیکس گوشوارے جمع کرانیوالوں کی تعداد میں گزشتہ سال کی نسبت 50فیصد اضافہ ہوا ہے۔

وزارت خزانہ کے مطابق ٹیکس گوشوارے جمع کرانیوالوں کی تعداد 15 لاکھ 90 ہزار تک پہنچ گئی، معاشی میدان کی سب سے بڑی کامیابی کاروبارمیں آسانی والی فہرست میں 28 درجے بہتری آئی۔ رواں مالی سال 22 نومبر تک پاکستان کے زرمبادلہ ذخائر میں 1ارب40کروڑ ڈالر کا اضافہ ہوا، اسٹاک مارکیٹ کارکردگی کے لحاظ سے 4 ماہ میں دنیا کی سب سے بہترین مارکیٹ رہی ہے۔

16 اگست سےاب تک اسٹاک مارکیٹ کاروبارمیں 39فیصد بہتری ہوئی ،4ماہ کےدوران اسٹاک مارکیٹ کے 100انڈیکس میں 11300پوائنٹس کا اضافہ ہوا، 29 نومبر تک پورٹ فولیو سرمایہ کاری ایک ارب 14 کروڑ ڈالر رہی اسی طرح سے رواں مالی سال کے پہلے4 ماہ میں براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری میں238 فیصد اضافہ ہواہے۔

رواں مالی سال کےپہلے4 ماہ میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں 73.5فیصد کمی ہوئی، مالی سال کے ابتدائی 5 ماہ میں تجارتی خسارے میں 34.42 فیصد کمی ہوئی، سال کےابتدائی 5 ماہ میں پاکستان کی برآمدات میں 4.8فیصداضافہ ہوا، مالی خسارہ جی ڈی پی کے1.4فیصد سےکم ہوکر0.7فیصد رہ گیا، توانائی کے شعبے میں گردشی قرض میں ہرماہ ہونیوالا اضافہ 38ارب سے کم ہوکر12 ارب روپے رہ گیا۔ پاکستان کے ترقیاتی فنڈز کا 50 فیصد منظوری کے بعد جاری کردیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں